(ن) لیگ بلاول بھٹو کو کیسے استعمال کر رہی تھی،بڑا راز بے نقاب ۔۔۔پیپلز پارٹی والوں نے محتاط ہو کر چلنے کا فیصلہ کر لیا

0

لاہور(ویب ڈیسک)وفاقی وزیراطلاعات شبلی فرازکا کہنا ہے کہ فاقی وزیر اطلاعات سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی نے اپنی پوزیشن واضح کردی،پیپلزپارٹی ایسے بیانیے کا حصہ نہیں بنے گی جس سے دشمن خوش ہو۔وفاقی وزیراطلاعات شبلی فرازنے پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو کے بیان پررد عمل میں کہا کہ ہرسیاست جماعت کا اپنا اپنا ایجنڈا ہوتا ہے، بلاول کو پتا چل گیا ہے ن لیگ انہیں استعمال کررہی ہے


اورپیپلزپارٹی ایسے بیانیے کا حصہ نہیں بنے گی جس سے دشمن خوش ہو۔شبلی فرازنے کہا کہ پی ڈی ایم کی جماعتوں کا مختلف ایجنڈا ہے، پارٹیاں آہستہ آہستہ پی ڈی ایم بیانیے سے لاتعلقی ظاہرکررہی ہیں، جو کریک نظرآرہے تھے وہ اب ٹوٹنے شروع ہو گئے ہیں، ہمارا موقف ہمیشہ پاکستان اوراس کے ادارے رہے ہیں۔شبلی فرازنے کہا کہ کارروائی ہوگی لیکن ہم ان کو سیاسی شہید نہیں بنانا چاہتے، فیصلہ سازی میں وقت کی بہت اہمیت ہوتی ہے، گلگت بلتستان کا الیکشن جیتیں گے۔ فاقی وزیر اطلاعات سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی نے اپنی پوزیشن واضح کردی، اس سے پی ڈی ایم کو نقصان ہوگا، نوازشریف نے اس پلیٹ فارم کو ذاتی مفاد کی بھینٹ چڑھایا۔چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کی طرف سے برطانوی نشریاتی ادارے کو دیے گئے ایک انٹرویو پر تبصرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کو پہنچنے والے نقصان کے بعد ہوسکتا ہے یہ پشاور کا جلسہ ملتوی کردیں ، کیوں کہ سابق وزیراعظم نوازشریف نے تصادم اور انتشار کا راستہ اختیار کیا ، کئی جماعتیں نہیں چاہیں گی کہ سیاسی ذاتی مفاد کے گرد گھومے، جب کہ ن لیگ کی اکثریت بھی اس بیانیہ کو پسند نہیں کرتی، اس کے علاوہ جلد دیگر جماعتیں بھی اس بیانیے سے خود کو الگ کریں گی۔واضح رہے کہ یئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹوزرداری نے کہا ہے کہ نوازشریف کی تقریر میں براہ راست فوجی قیادت کے نام سنے تودھچکا لگا ، انتظار ہے سابق وزیراعظم کب ثبوت پیش کریں گے ، یقین ہے کہ انہوں نے واضح اور ٹھوس ثبوت کے بغیر نام نہیں لیے ہوں گے ، لیکن عمران خان کی حکومت کو لانے کی ذمہ داری کسی ایک شخص پر نہیں ڈالی جا سکتی۔ بی بی سی کو انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ ہمارا ایجنڈا ہماری آل پارٹیز کانفرنس میں طے پانے والی قرارداد میں واضح ہے، پی ڈی ایم ایجنڈے کی تیاری کےوقت ن لیگ نےفوجی قیادت کانام نہیں لیا تھا ، گوجرانوالہ جلسے میں فوجی قیادت کا نام لینا نوازشریف کا ذاتی فیصلہ تھا ، نواز شریف کی اپنی جماعت ہے اور میں یہ کنٹرول نہیں کر سکتا کہ وہ کیسے بات کرتے ہیں، عام طور پر ہم جلسوں میں اس طرح کی بات نہیں کرتے ، اس لیے میں یہ واضح کر دوں کہ یہ ہماری اے پی سی کی طرف سے جاری کی گئی مشترکہ قرارداد میں مطالبہ نہیں تھا اور نہ ہی یہ ہماری پوزیشن ہے ، مگر نوازشریف کا یہ حق ہے کہ وہ اس قسم کا موقف لینا چاہیں تو ضرور لے سکتے ہیں۔








شیئر کریں

Leave A Reply

Your email address will not be published.