جو لوٹے دباؤ برداشت نہیں کرسکتے، وہ یہ کام کیسے کر سکتے ہیں ۔۔۔!!! مریم نواز نے نیا شوشہ چھوڑ دیا

0

اسلام آباد( ویب ڈیسک) پاکستان مسلم لیگ ن کی مرکزی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ جو لوٹے دباؤ برداشت نہیں کرسکتے، وہ عوام کی خدمت کیا کریں گے؟ لوٹوں کو ہمیشہ کیلئے دریا میں بہا دینا، ایک گیڈر مداری نے گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے کا جھانسہ دیا لیکن اس کی اپنی حکومت کی ٹانگیں


کانپ رہی ہیں۔ انہوں نے گلگت بلتستان میں گانچھے میں انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ لوگ جس طرح جلسے میں آئے ہیں اسی طرح ووٹ ڈالنے جانا اور شیر پر مہر لگانا۔میں وعدہ کرتی ہوں کہ جس طرح نوازشریف نے خدمت کرکے عوام سے محبت کا لازوال رشتہ قائم کرلیا ہے، اسی طرح مریم نواز بھی عوام کی غربت، تعلیم صحت اور حق کیلئے لڑے گی۔ یہ مریم نواز کا وعدہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں جانتی ہوں کہ جب گلگت بلتستان کا سرفخر سے بلند ہوتا ہے تو پاکستان کا سربلند ہوتا ہے۔گلگت بلتستان کے بغیر پاکستان کی حالت ایسی ہے جس کے اندر خون نہیں ہے۔گلگت بلتستان کے لوگو زندہ باد۔ انہوں نے کہا کہ جو لوٹے ہیں، جو تھوڑا سا بھی دباؤ برداشت نہیں کرسکتے۔ عوام یاد رکھیں جو نمائندہ عوام کے ووٹ کو بیچ کر دباؤ برداشت نہیں کرسکتا وہ عوام کی خدمت کیسے کرے گا؟ لوٹوں کو ہمیشہ کیلئے دریا میں بہا دو، لوٹوں کو ووٹ مت دینا۔ یہاں رضا الحق مدنی جیسی نوجوان قیادت کو نوازا ہے جوق درجوق پولنگ اسٹیشن پر جانا اور شیر پر مہر لگانا۔انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں ایک گیڈر آیا تھا، اور عوام کو صوبے کا جھانسہ دے کر چلا گیا، چند لوگوں سے خطاب کیا اور چلا گیا لیکن عوام میں جانے سے ڈرتا ہے۔ یہاں کی عوام بڑی پڑھی لکھی عوام ہے۔ یہاں کے لوگ سمجھتے ہیں جس مداری کی حکومت کی اپنی ٹانگیں کانپ رہی ہیں۔ وہ کیسے صوبہ بنا سکتا ہے؟ نوازشریف نے گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے کیلئے تین سال کام کیا، انشاء اللہ نوازشریف ہی گلگت بلتستان کو صوبہ بنائے گا۔نوازشریف نے ایک کروڑ نوکریاں اور 50 لاکھ گھروں کا وعدہ نہیں کیا۔ بلکہ حقیقی خدمت کی ہے۔ میں عوام سے کہتی ہوں شیر پر ٹھپہ لگانا اور ن لیگ کو کامیاب کروانا۔ ووٹ چور کے اعلان کی یہاں کوئی حیثیت نہیں ہے۔ وہ نوازشریف کے منصوبوں پر اپنی تختیاں لگا رہا ہے، یہاں بھی وہ نوازشریف کے کام پر اپنا نام لکھوانا چاہتا ہے۔ لیکن گانچھے کے لوگ بڑے سمجھدار ہیں۔جہاں پر بھی ان کو لگتا ہے نوازشریف جیت رہا ہے وہاں دھاندلی کرواتے ہیں۔ ہمارے 9 امیدواروں کو توڑ کر لے گئے ہیں۔ ان نو امیدواروں کو توڑا جاسکتا ہے لیکن گلگت بلتستان کے لوگوں کو نہیں توڑا جاسکتا۔ یہاں پر اگر گیدڑ کی قیادت آگئی تو پھر مقدمہ ہار جائیں گے۔ شیروں کو شیر کی قیادت کی ضرورت ہے۔ گلگت بلتستان کے لوگ اپنے ووٹ کو بوٹوں کے نیچے روندنے کی اجازت نہیں دیں گے، پولنگ اسٹیشن پر ووٹ چوری بچانے کیلئے اپنے ووٹ پر پہرہ دیں گے۔








شیئر کریں

Leave A Reply

Your email address will not be published.