فرانس کا اسلام پر ایک اور غ لیظ حملہ ۔۔۔ پبلک ٹرانسپورٹ پر کس کے پوسٹر لگا دیے؟ جان کر آپ بھی شدید غصے میں آ جائیں گے

0


لاہور (ویب ڈیسک) فرانس نے تو ساری حدیں ہی پار کر ڈالی ہیں۔ایک طرف حکومتی سطح پر اسلام مخالف سرگرمیوں کا ساتھ نہ دینے کا اعلان کیا جاتا ہے اور ساتھ ہی اگلے دن کوئی ایسی حرکت سرزد کر دیتے ہیں کہ مسلمانوں کا Khon کھول اٹھتا ہے اور معاملات شرانگیزی کی طرف جانے لگتے ہیں۔گستاخانہ خاکوں سے لے کر عمارتوں پر گستاخانہ پوسٹرز لگانے تک، مساجد بند کرنے سے مساجد میں خ نزیر کے سر پھینکنے تک فرانسیسیوں نے اب تک مسلمانوں کے دل دکھانے اور اسلام کا تمسخر اڑانے کا کوئی موقعہ ہاتھ سے نہیں جانے دیا۔

اور اب ایک اور گ ھٹیااور غ لیظ ترین حرکت کر ڈالی ہے جس پر فرانس کے مسلمانوں سمیت دنیا بھر کے مسلمانوں میں شدید غم و غصہ پایا جا رہا ہے۔فرانس میں بورت فلم کے پوسٹر ان بسوں پر آویزاں کر دیے گئے ہیں جو کہ مسلم علاقوں میں چلتی ہیں۔ان بسوں پر بڑے بڑے پوسٹرز آویزاں کیے گئے ہیں جو کہ انگلش ایکٹر ساچا بیرن کوہن کے ہیں۔وہ بالکل Nanga لیٹا ہے اور اس نے اپنے اع ضائے م خصوصہ کو منہ ڈھانپنے والے ماسک کے ساتھ ڈھانپ رکھا ہے اور اس کے ہاتھ کی انگلی میں ایک انگوٹھی ہے جس کے اوپر عربی زبان میں اللہ لکھا ہوا ہے۔مقامی لوگوں نے سوشل میڈیا پر اس کے خلاف خوب احتجاج کیااور بس انتظامیہ سے ان اشتہاری پوسٹرز کو ہٹانے کی اپیل کی ہے۔جبکہ حکام کی طرف سے اس غ لیظ حرکت پر کوئی نوٹس نہیں لیا گیا۔آفیشلی طور پر بس کمپنی نے یہ اشتہار ہٹانے سے انکار کردیا ہے جبکہ کچھ ذرائع کے مطابق یہ خبر سامنے آ رہی ہے کہ کچھ بسوں سے اشتہار ہٹا دیے گئے ہیں۔ اس قسم کے اش تعال انگیز اشتہار فرانس کی بسوں پر اس وقت آویزاں کیے گئے ہیں جب ناموس رسالتﷺ کے حوالے سے دنیا بھر کے مسلمان اضطراب کی حالت میں ہیں اور وہ فرانس کا بائیکاٹ کرنے کی مہم چلارہے ہیں۔ایسے میں فرانس کی طرف سے ایسی گ ھٹیا حرکت کا واقع ہونا یہ ظاہر کرتا ہے کہ فرانس حکومت اور فرانسیسی عوام اسلام دش منی میں کھل کر فرنٹ پر آ چکے اور وہ اپنے موقف سے پیچھے ہٹنے والے نہیں ہیں۔



Source link

شیئر کریں

Leave A Reply

Your email address will not be published.