چار لاپتہ بیٹوں کی ماں: ’آنکھیں ہر وقت دروازے پر لگی رہتی ہیں کہ وہ کب گھر آ جائیں‘

0

میں بوڑھی عورت ہوں، کبھی کسی کی مدد تو کبھی کسی کی مدد لے کر عدالت تک اس امید پر جاتی ہوں کہ شاید اس مرتبہ بیٹے مل جائیں گے لیکن ہر بار نا امیدی کا سامنا ہی ہوتا ہے۔‘

پاکستان میں لاپتہ افراد کے گھرانوں میں کہیں شوہر نہیں تو کسی کا باپ غائب ہے اور کہیں بیٹا لاپتہ ہے لیکن ایک ایسی ماں بھی ہیں جن کے چار بیٹے پانچ سال سے لاپتہ ہیں۔

جان پری اپنی چار بہوؤں اور پوتوں سمیت اپنے بیٹوں کی راہ تکتی رہتی ہیں اور ان کا ہر دن ایسے ہی گزر جاتا ہے۔

ان کی عمرلگ بھگ 75 برس ہے اور ان کے شوہر فوت ہو چکے ہیں۔ اب گھر میں کمانے والا کوئی نہیں اور ان کی زندگی اب لوگوں کی دی ہوئی امداد پر گزر رہی ہے۔
جان پری کے لاپتہ بیٹے شادی شدہ ہیں اور ان کے بچے بھی ہیں۔ جان پری کا کہنا ہے کہ ان کے بیٹے لاپتہ ہونے سے پہلے محنت مزدوری کرتے تھے اور روزانہ اتنی کمائی ہو جاتی تھی کہ گھر کا راشن آجاتا تھا لیکن اب تو جان کے لالے پڑے ہوئے ہیں۔
یہ بھی پڑھیے

شیئر کریں

Leave A Reply

Your email address will not be published.